فاٹا، تمام غیرسرکاری اداروں میں مقامی لوگوں کی بھرتی لازمی قرار وانا میں محسود یوتھ جرگہ کے ساتھ ملاقات کے موقع پر ڈپٹی کمشنر جنوبی وزیرستان محمد سہیل نے تمام این جی اوز کو حکم نامہ جاری کرتے ہوئے کہا کہ فاٹا سیکٹریٹ سے جاری ہونے والے مراسلے کے مطابق فاٹا میں کام کرنے والے این جی اوز میں مقامی عملے کی تعیناتی لازمی ہوگی۔

حیات اللہ محسود سےقبائلی اضلاع میں کام کرنے والے تمام غیرسرکاری اداروں کو غیرمقامی عملہ برطرف کرنے اور مقامی لوگوں کو لازمی بھرتی کرنے کے احکامات جاری کر دیے گئے۔
وانا میں محسود یوتھ جرگہ کے ساتھ ملاقات کے موقع پر ڈپٹی کمشنر جنوبی وزیرستان محمد سہیل نے تمام این جی اوز کو حکم نامہ جاری کرتے ہوئے کہا کہ فاٹا سیکٹریٹ سے جاری ہونے والے مراسلے کے مطابق فاٹا میں کام کرنے والے این جی اوز میں مقامی عملے کی تعیناتی لازمی ہوگی۔
ڈپٹی کمشنر کی جانب سے جاری حکمنامے کے مطابق تمام این جی اوز دس دن کے اندر اندر تمام غیر مقامی افراد کو فوری طور پر برطرف کریں اور کلاس فور سے لے کر کوارڈینیٹر تک تمام آسامیوں پر مقامی افراد کی تعیناتی یقینی بنائیں جبکہ غیر مقامی سٹاف کی برطرفی کے بعد فوری طور پر ان آسامیوں کا اشتہار اخبارات میں لگا کر دپٹی کمشنر کے دفتر ارسال کریں۔
اس موقع پر ڈپٹی کمشنر جنوبی وزیرستان محمد سہیل کا مزید کہنا تھا کہ آپریشن راہ نجات کے باعث محسود قبیلے کا سب سے زیادہ نقصان ہوا ہے اس لیے میں دیگر اضلاع کے ذمہ داران کو خصوصی طور پر مراسلہ ارسال کروں گا کہ محسود نوجوانوں کو خصوصی کوٹہ دیا جائے تاکہ زیادہ سے زیادہ نوجوانان بر سر روزگار ہوجائیں۔
انہوں نے کہا کہ جنوبی وزیرستان میں سروے کے لیے مزید 7 تحصیلدار تعینات کیے گئے ہیں جو بہت جلد جنوبی وزیرستان میں تباہ شدہ مکانات کے سروے کا عمل شروع کرینگے۔
ڈپٹی کمشنر کے مطابق محکمہ ایجوکیشن جنوبی وزیرستان میں اقربا پروری اور کرپشن کے خلاف انکوائری بنائی گئی ہے ۔
اس موقع پر محسود یوتھ جرگہ کی کور کمیٹی نے ڈپٹی کمشنر جنوبی وزیرستان محمد سہیل کا اس اقدام پر خصوصی شکریہ ادا کرتے ہوئے مستقبل میں بھی محسود قوم کے فلاح و بہبود کے لیے ایسے اقدامات اٹھانے کی امید ظاہر کی۔
خیال رہے کہ قبائلی اضلاع کے عوام کا سابقہ فاٹا میں مصروف عمل ملکی و غیرملکی این جی اوز میں مقامی لوگوں کی بھرتی کا دیرینہ مطالبہ تھا جس کیلئے وقتاَ فوقتاَ احتجاج بھی کیا جاتا رہا۔
گزشتہ دنوں بھی محسود یوتھ جرگہ کی جانب سے بنوں میں احتجاج کیا گیا تھا جس کے بعد ڈپٹی کمشنر ٹانک کے سامنے تین مطالبات رکھے گئے تھے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.