میزبان ٹیم نے دوسری اننگز میں 7 وکٹوں پر 319 رنز بنالیے ،ڈبلن ٹیسٹ دلچسپ مرحلے میں داخل،

ڈبلن ٹیسٹ میں فتح کے قریب پاکستانی ٹیم مشکل میں پھنس گئی، آئرلینڈ نے فالوآن کے بعد دوسری اننگز میں عمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے7وکٹ پر 319رنز اسکور کرلیے

آئرلینڈ کی ٹیم کو ٹیسٹ کا درجہ ملنے کے بعد اپنا پہلا ٹیسٹ میچ کھیل رہی ہے جو اب دلچسپ مرحلے میں داخل ہوگیا ہے، پاکستان کو کامیابی حاصل کرنے کھیل کے آخری روز آئرلینڈ کو جلد از جلد آؤٹ کرنا ہوگا ۔

ڈبلن ٹیسٹ میں فالوآن کے بعد 180رنز کے خسارے سے دوسری اننگز کا آغاز کرنے والے آئرلینڈ نے تیسرے روز کا کھیل ختم ہونے تک بغیر کوئی وکٹ گنوائے 64رنز بنائے تھے،پیر کو ایڈ جوائس 39اور ولیم پورٹر فیلڈ23کے انفرادی اسکور کے ساتھ کریز پر آئے۔

پاکستان کو پہلی کامیابی تیسرے ہی اوور میں مل گئی،سنگل کیلیے کوشاں ایڈ جوائس کو فہیم اشرف کے مڈوکٹ سے شاندار ڈائریکٹ تھرو نے کریز تک پہنچنے کی مہلت نہ دی، اوپنر نے 43رنز بنائے، محمد عباس نے اینڈی بالبرینی کو کھاتہ کھولنے سے قبل ہی ایل بی ڈبلیو کردیا،انھوں نے ڈیبیو پر پیئرکی شرمندگی اٹھاتے ہوئے پویلین کی راہ لی،مجموعی اسکور 93تک پہنچا تھا کہ محمد عامر نے نیل اوبرائن(18)کی بیلز فضا میں بکھیر دیں،اگلا شکار بھی پیسر نے کیا۔

ولیم پورٹر فیلڈ32رنز بناکر وکٹ کیپر سرفراز احمد کو کیچ دے بیٹھے،کیون اوبرائن ابتدا میں ہی خوش قسمتی سے وکٹ محفوظ رکھنے میں کامیاب ہوئے،شاداب خان کی ایک گیند بیٹ کا اندرونی کنارا چھوتی ہوئی اسٹمپس کے انتہائی قریب سے گزر گئی،لنچ تک آئرلینڈ نے 4وکٹ پر123رنز بنائے تھے،وقفے کے بعد محمد عباس کی شاندار ان سوئنگر پر پال اسٹرلنگ ایل بی ڈبلیو ہوگئے،ان کی اننگز صرف11رنز تک محدود رہی۔

پہلی باری میں انجری کی وجہ سے نویں نمبر پر بیٹنگ کرنے والے گیری ولسن اس بار ساتویں بیٹسمین کے طور پرمیدان میں آئے، وہ12کے انفرادی اسکور پر محمد عامر کی 100ویں وکٹ بن گئے، سلپ میں موجود حارث سہیل نے کیچ لینے میںکسی غفلت کا مظاہرہ نہیں کیا،اسٹورٹ تھامپسن کو6 رنز پر ایک موقع ملا،راحت علی کی گیند پر سرفراز احمد نے ڈائیو لگانے کے باوجود ایک مشکل موقع گنوا دیا۔

اننگزکے76ویں اوور میں آئرلینڈ کا خسارہ ختم اور سبقت کا آغاز ہوا جس کے بعد کیون اوبرائن نے ملک کیلیے پہلی ففٹی بنانے والے بیٹسمین کا اعزاز اپنے نام کے آگے درج کرایا، پاکستان نے میزبان بیٹنگ لائن کا جلد صفایا کرنے کا عزم لیے نئی گیند طلب کرلی،چائے کے وقفے تک میزبان ٹیم نے 6وکٹ پر212رنز بناکر32کی برتری حاصل کرلی تھی

آئرلینڈ اور پاکستان کے درمیان تاریخی ٹیسٹ کا پہلا روز 11 مئی کو بارش کی نذر ہوگیا تھا جس کے باعث ٹاس بھی نہیں ہوسکا تھا تاہم ٹیسٹ کے دوسرے روز میزبان ٹیم نے ٹاس جیت کر پہلے پاکستان کو بیٹنگ کی دعوت دی۔  ۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.